عرب امارات نے استقبال کے لفظ کو نئے معانی پہنادیے،صدر پوتن کے شاندار استقبال کے روسی میڈیا میں چرچے


ماسکو ، 16 اکتوبر ، 2019 (وام) ۔۔ روسی میڈیا نے متحدہ عرب امارات میں صدر ولادیمیر پوتن کے کھلے دل کے ساتھ کئے گئے استقبال کو نمایاں کرتے ہوئے پرتپاک مہمان نوازی کی تعریف ہے۔ 'سرخ قالین ویمپس کے لئے ہیں! متحدہ عرب امارات نے کیسے روسی صدر ولادیمیر پوتن کا استقبال کیا 'کے عنوان سے منگل کے روز روسی خبر رساں ایجنسی ، سپوتنک نے اپنی سٹوری میں کہا کہ "ابوظہبی میں میزبانوں نے صدر پوتن کا ایسے استقبال کیا کہ" استقبال "کے لفظ کو ایک نیا معنی پہنادیا ہے۔ سٹوری میں کہا گیا کہ پوتن کے متحدہ عرب امارات کے دورے کا جشن "اس انداز سے منایا گیا یہاں تک کہ وی آئی پی مہمان بھی حیرت زدہ رہ جاتاہے ، گاڑی کے ساتھ گھوڑوں کا دستہ بھی شامل تھا جو روسی روڈ پولیس کی کاروں کی طرح دکھائی دیتا تھا۔ "

اس خبررساں ادارے نے لکھا کہ"جیسے ہی ولادیمیر پوتن ابو ظہبی کے ہوائی اڈے پر اترے ، ناصرف انہیں توپوں کی سلامی دی گئی بلکہ ، ابو ظہبی کے ولی عہد اور متحدہ عرب امارات کی مسلح افواج کے ڈپٹی سپریم کمانڈر عزت مآب شیخ محمد بن زاید آل نھیان نے ان سے ملاقات کی۔ نخلستانی شہر میں صدر پوتن کے راستوں کو روس اور متحدہ عرب امارات کے بینرز سے سجایا گیا تھا اور امارات کی فضائیہ کے طیاروں نے روس کے قومی پرچم کے رنگ بکھیرتے ہوئے ان کا استقبال کیا۔ سپوتنک کے مطابق ، صدر پوتن ایک اوروس لیموزین میں سوار ہوئے جسے ماسکو متحدہ عرب امارات میں فروخت اور پیدا واری منصوبے کاخواہش مند ہے۔ سپنٹک نے مزید لکھا کہ"کاروں کے علاوہ ، صدر کی لیموزین کو گھڑ سوار دستے نے اپنے حصار میں لیا ہوا تھا ۔ مزید یہ کہ ، ٹویٹر پر ، پوتن کی آمد پر موٹر کیڈ کی ایک ویڈیو کا حوالہ دیتے ہوئے ، ایک روسی صحافی نے لکھا ، "اس قدر احترام کی علامت کس حد تک جاسکتی ہیں۔"

روسی ٹیلی ویژن، آر ٹی نے ، صدر پوتن کی ایک ویڈیو نشر کی جس میں صدر پوتن شیخ محمد بن زاید کو ایک روسی گرے فالکن کا تحفہ دے رہے ہیں اور شیخ محمدپرندے کی خوبصورتی سے متاثر نظر آرہے ہیں۔اس موقع پر صدرپوتن کو شاہی خاندان کی پرانی رہائش گاہ ، سنہری اماراتی محل کا ماڈل تحفہ میں دیا گیا۔ روسی خبرایجنسی ، تاس ، نے ابو ظہبی میں دونوں ممالک کی کاروباری برادری کے نمائندوں کے ساتھ روسی رہنما کی ملاقات پر روشنی ڈالی ، جہاں پوتن نے کہا کہ عرب امارات جوہری طاقت کو فروغ دینے میں روس کی امداد پر اعتماد کرسکتا ہے۔ حلال گوشت اور اناج کے حوالے سے روسی صدر نے یہ بھی کہا کہ ان کا ملک گوشت کی فراہمی، زرعی مصنوعات اور کھانے کی اشیاکے لئے عرب امارات کی مارکیٹ طلب کو پورا کرسکتا ہے۔ ٹی اے ایس ایس نے کہا کہ پوتن نے خلائی تحقیق میں مشترکہ تعاون جاری رکھنے کے لئے اپنے ملک کی خواہش کا بھی اظہار کیا۔ دورے کے دوران ، دونوں ممالک نے پیٹرو کیمسٹری ، ٹرانسپورٹ ، اور ادویات کے شعبوں میں ایک ارب چالیس کروڑ ڈالر مالیت کے معاہدوں پر دستخط کیے۔ صدر پوتن نے پہلی مرتبہ اماراتی خلاباز ھزاع المنصوری کے کامیاب مشن کے حوالے سے کہا کہ یہ دوستی کی بدولت ہی ممکن ہوا ۔ خبر ایجنسی نے دونوں رہنماوں کے مابین ہونے والی گفتگو کا حوالہ دیا ۔" روسی رہنما نے اماراتی رہنما کو " روس کا ایک عظیم دوست " بھی قرار دیا ہے۔ اس موقع پر ولی عہد نے روسی رہنما کی حمایت کو سراہا۔ انہوں نے صدر پوتن سے کہا کہ "مسٹر پریذیڈنٹ، آپ کی مدد کے بغیریہ کبھی ممکن نہ ہوتا۔"

صدر پوتن نے جواباً کہا کہ "اگر ہماری دوستی نہ ہوتی تو یہ نہیں ہوتا۔"

ترجمہ۔تنویر ملک http://wam.ae/en/details/1395302795099

WAM/Urdu