حمد ان بن راشد نے WETEX 2019اور چوتھے دبئی سولر شو کا افتتاح کردیا

  • حمدان بن راشد يفتتح الدورة ال21 من معرض
  • حمدان بن راشد يفتتح الدورة ال21 من معرض
  • حمدان بن راشد يفتتح الدورة ال21 من معرض
  • حمدان بن راشد يفتتح الدورة ال21 من معرض

دبئی،21 اکتوبر، 2019 (وام) ۔۔ دبئی کے نائب حکمران، وزیر خزانہ اور دبئی بجلی اور پانی کی اتھارٹی کے صدر شیخ حمدان بن راشد آل مکتوم نے 21 ویں واٹر، انرجی، ٹیکنالوجی اور ماحولیات نمائش، WETEX 2019اور چوتھے دبئی سولر شو کا افتتاح کیا۔ 21 سے 23 اکتوبر کو چھٹے گرین ویک کے تحت دبئی انٹرنیشنل کنونشن اینڈ نمائشی مرکز میں ہونے والی ان دونوں نمائشوں کا اہتمام دبئی بجلی اور پانی کی اتھارٹی کررہی ہے جس میں 55 ممالک کے 2,350نمائش کنندگان شریک ہیں۔ دبئی بجلی اور پانی کی اتھارٹی کے چیئرمین مطر حمید الطائر ، اتھارٹی کے ایم ڈی اور سی ای او سعید محمد الطائر، WETEX کے بانی اور چیئرمین اور اتھارٹی بورڈ کے دیگر ممبران نے شیخ حمدان بن راشد کا استقبال کیا۔ WETEX 2019 کی افتتاحی تقریب میں ماحولیاتی تبدیلی اور ماحولیات کے وزیر ڈاکٹر ثانی الزیودی اور سرکاری اور نجی شعبے کے عہدیدار بھی موجود تھے۔ افتتاحی تقریب کے بعد شیخ حمدان بن راشد آل مکتوم نے سعید محمد الطائر اور دیگر مہمانوں کے ہمراہ نمائش کا دورہ کیا۔ انھیں مختلف ایجادات، جدیدحل اور نئی مصنوعات جیسے توانائی اور پانی کی صفائی، گرین ٹیکنالوجی، صاف اور قابل تجدید توانائی، ماحولیاتی استحکام اور تیل و گیس کے بارے میں بتایا گیا۔ شیخ حمدان نے دبئی بجلی اور پانی کی اتھارٹی پویلین کا معائنہ کیا۔ اس موقع پر انہوں نے انٹلیجنٹ گیس ٹربائن کنٹرولر کا آغاز کیا جو دبئی بجلی اور پانی کی اتھارٹی نے سیمنز کے ساتھ مل کر توانائی پیدا کرنے والے پلانٹوں میں گیس ٹربائنوں کو کنٹرول کرنے کے لئے تیار کیا ہے۔ یہ دنیا میں اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہے۔ سعید محمد الطائر نے شیخ حمدان کو دبئی بجلی اور پانی کی اتھارٹی کے متعدد منصوبوں کے بارے میں آگاہ کیا جس میں محمد بن راشد آل مکتوم شمسی پارک، جو دنیا کا سب سے بڑا واحد سائٹ اسٹریٹجک قابل تجدید توانائی پیداواری منصوبہ انڈیپنڈنٹ پاورپروڈیوسر، آئی پی پی ماڈل پر مبنی ہے۔ پچاس ارب درہم کی سرمایہ کاری سے ہونے والے اس منصوبے سے 2030 تک 5000 میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کی گنجائش ہوگی۔ دبئی ایکسپو 2020 اور سیمنز کے تعاون سے دبئی بجلی اور پانی کی اتھارٹی مشرق وسطی اور شمالی افریقہ میں پہلا گرین ہائیڈروجن پروجیکٹ لاگو کررہی ہے جہاں تیار کردہ ہائیڈروجن کو مختلف مقاصد کے لئے ذخیرہ کرکے استعمال کیا جائے گا۔ شیخ حمدان کو بجلی اور پانی کی کھپت سے متعلق تکنیکی رپورٹس کے لئے سمارٹ رسپانس انیشیٹو کے بارے میں بتایا گیا۔ اس سے صارفین کو گھروں کے اندر موجود تکنیکی خرابیوں کی خود تشخیص اور ڈیوا سمارٹ ایپلی کیشن اور اس کی ویب سائٹ کے ذریعے براہ راست حل کرکے اس میں شامل اقدامات کی تعداد کو کم کرنے کی سہولت ملتی ہے۔ اس سے صارفین کا تجربہ بڑھ رہا ہے اور خدمات کی کارکردگی میں بہتری آرہی ہے۔ شیخ حمدان نے چین کے پویلین سمیت قومی اور بین الاقوامی پویلینز کے گروپ کا بھی دورہ کیا جو پانی، توانائی اور ماحولیات میں مہارت حاصل کرنے والی چینی کمپنیوں کی سب سے بڑی تعداد ہے۔ WETEX اور DSS میں تقریبا 110 چینی کمپنیاں حصہ لے رہی ہیں۔ اطالوی پویلین میں 22 کمپنیاں شامل ہیں۔ انھوں نے ای این او سی، مصدر، اے سی ڈبلیو اے پاور سعودی عرب، سیمنز، اے بی بی، دبئی ایکسپو 2020، امپاور، مورو، دوکاب، ابو ظبی شعبہ توانائی کے اسٹینڈ، روڈز اینڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی (آر ٹی اے) اور دبئی بلدیہ، اتحاد ای ایس سی او اور دوسرے اسٹینڈز کا بھی دورہ کیا۔

ترجمہ:ریاض خان ۔

http://www.wam.ae/en/details/1395302796416

WAM/Urdu