وزارت خزانہ میں سعودی ، اماراتی مشترکا ورکنگ گروپ کا پہلا اجلاس

  • المالية تستضيف الاجتماع الأول لفريق العمل السعودي الإماراتي المشترك
  • المالية تستضيف الاجتماع الأول لفريق العمل السعودي الإماراتي المشترك

دبئی ، 26 جنوری ، 2020 ، (وام) ۔۔ متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب کے درمیان تعاون کو فروغ دینے کیلئے عرب امارات کی وزارت خزانہ نے حال ہی میں سعودی اماراتی مشترکا ورکنگ گروپ کے پہلے اجلاس کی میزبانی کی – سعودی اماراتی کوآرڈینیشن کونسل کے تحت قائم اس مشترکا ورکنگ گروپ میں وزارت خزانہ کے انڈرسیکریٹری یونس حاجی الخوری اور دیگر متعلقہ محکموں کے اعلی عہدیداروں نے شرکت کی ۔ اس مین شریک سعودی وفد کی قیادت غیرملکی تجارت کی جنرل اتھارٹی کمرشل اتاشی اور ایگزیکٹو ڈائریکٹر برائے بین الاقوامی تعلقات جابر المشعل کررہے تھے – الخوری نے سعودی وفد کی آمد کا خیرمقدم کرتے ہوئے دونوں ممالک کے مضبوط تعلقات کی بنیاد کے اس عزم کا اعادہ کیا جو بانی قائد مرحوم شیخ زاید بن سلطان النھیان نے رکھی تھی ۔ انکا کہنا تھا کہ عرب امارات ، سعودی عرب کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعلقات اور تعاون کو فروغ دینے کا خواہشمند ہے ، خصوصا کسٹمز مقامات پر ٹریفک کے بہاؤ کو سہولیات دینے کی ضرورت ہے ۔ تعاون اور تعلقات کی یہ صورتحال دونوں ممالک کے عوام کی فلاح اور خوشحالی کا باعث بھی ہے – انکا کہنا تھا کہ ایسے اجلاس درپیش چیلنجز سے مل کر عہدہ برآ ہونے کا اہم موقع ہیں ، سعودی اماراتی کوآرڈینیشن کونسل کی ایگزیکٹو کمیٹی کی ہدایات کے مطابق ، وزارت خزانہ ایسے اجلاسوں کے نتائج کو موثر بہ عمل بنانے کیلئے تمام محکموں کے ساتھ مل کر کام کرنے کی خاطر پرعزم بھی ہے – دوران اجلاس دونوں ممالک کی سٹریٹجک شراکت داری کے نتائج پر غورکیا گیا جس کے نتیجے میں عرب امارات میں سعودی سرمایہ کاری 2018 میں بڑھ کر 93ء10 ارب درہم کی ہوگئی ، اس میں سے 35ء6 ارب درہم وہ ہیں جن سے جوائنٹ سٹاک میں سرمایہ کاری کی گئی ہے اور انہیں خلیجی باشندوں کیلئے قابل تبادلہ بھی رکھا گیا ہے ۔ ملک میں منتقلیوں کے سلسلے میں 58ء4 ارب درہم سعودی سرمایہ کاروں کے رہے ، 2018 میں عرب امارات میں لائسنس یافتہ سعودی کاروبار کی تعداد 12329 ہوگئی ، ان میں 1282 پروفیشنل لائسنس ، 9565 کمرشل ، 950 صنعتی ، 468 سیاحتی ، 29 زرعی اور 35 دیگر نوعیت کے لائسنس ہیں – عرب امارات میں 2018 کے دوران رئیل اسٹیٹ شعبے میں 14455 سعودی شہریوں نے سرمایہ کاری کی ، عرب امارات میں سوشل سکیورٹی کے حقدار سعودی ملازمین کی تعداد 4055 ہوگئی ، عرب امارات کے عمومی اور ووکیشنل تعلیمی اداروں میں زیرتعلیم سعودی طلبا کی تعداد 2147 ہوگئی جبکہ عرب امارات میں صحت سہولیات حاصل کرنے والے سعودی شہریوں کی تعداد 59068 ہوگئی – دونوں ممالک کے درمیان 2016 میں دوطرفہ تجارت 6ء71 ارب درہم ، 2017 میں 3ء97 ارب درہم اور 2018 میں 4ء107 ارب درہم کی رہی ۔ یہ حجم عرب امارات کی تمام خلیج تعاون کونسل کے ممالک کے ساتھ تجارت کا 49 فیصد ہے ۔ سعودی اماراتی کوآرڈینیشن کونسل کی ایگزیکٹو کمیٹی نے 15 اپریل 2019 کو ریاض میں اجلاس کے دوران سعودی وزیر خزانہ محمد بن عبداللہ اور اماراتی وزیر مملکت برائے امور خزانہ عبید بن حمید الطائر کو دوطرفہ تجارت کے فروغ کی خاطر مشترکا گروپ بنانے کی ذمہ داری سونپی تھی ۔ سعودی اماراتی کوآرڈینیشن کونسل نے دونوں ممالک کے درمیان تعاون و تعلقات کو مزید فروغ دینے کیلئے سات یقین دہانیوں کا اظہار کیا تھا اور اسی کے نتیجے میں مالیات و سرمایہ کاری کی کمیٹی بھی قائم ہوئی ، یہ کمیٹی کسٹمز یونین اور کامن مارکیٹ ، خدمات و مالیاتی مارکیٹ اور کاروباری شعبے کیلئے متعدد سٹریجک اقدامات کی ذمہ داری ہے – ترجمہ ۔ تنویر ملک – http://www.wam.ae/en/details/1395302818831

WAM/Urdu