اتوار 20 ستمبر 2020 - 11:39:20 شام

متحدہ عرب امارات کا طیارہ 40ٹن طبی سامان،خوراک لیکر بیروت پہنچ گیا

  • تنفيذا لتوجيهات محمد بن زايد .. طائرة مساعدات إماراتية تحمل 40 طنا من المواد الإغاثية تصل العاصمة اللبنانية لدعم المتأثرين من انفجار مرفأ بيروت
  • تنفيذا لتوجيهات محمد بن زايد .. طائرة مساعدات إماراتية تحمل 40 طنا من المواد الإغاثية تصل العاصمة اللبنانية لدعم المتأثرين من انفجار مرفأ بيروت
  • تنفيذا لتوجيهات محمد بن زايد .. طائرة مساعدات إماراتية تحمل 40 طنا من المواد الإغاثية تصل العاصمة اللبنانية لدعم المتأثرين من انفجار مرفأ بيروت
  • تنفيذا لتوجيهات محمد بن زايد .. طائرة مساعدات إماراتية تحمل 40 طنا من المواد الإغاثية تصل العاصمة اللبنانية لدعم المتأثرين من انفجار مرفأ بيروت
  • تنفيذا لتوجيهات محمد بن زايد .. طائرة مساعدات إماراتية تحمل 40 طنا من المواد الإغاثية تصل العاصمة اللبنانية لدعم المتأثرين من انفجار مرفأ بيروت
  • تنفيذا لتوجيهات محمد بن زايد .. طائرة مساعدات إماراتية تحمل 40 طنا من المواد الإغاثية تصل العاصمة اللبنانية لدعم المتأثرين من انفجار مرفأ بيروت
ویڈیو تصویر

ابوظبی، 8 اگست،2020 (وام) ۔۔ متحدہ عرب امارات کا ایک طیارہ 40 میٹرک ٹن اہم طبی سامان ، کھانے پینے کی اشیاء اور بچوں کے لئے غذائیت سے بھرپور خوراک لے کر لبنان کے دارلحکومت بیروت پہنچ گیا ہے۔ انسانی ہمدردی کی بنیاد پر یہ امداد ابو ظبی کے ولی عہد اور متحدہ عرب امارات کی مسلح افواج کے ڈپٹی سپریم کمانڈر شیخ محمد بن زاید آل نھیان کی ہدایت اور الظفرہ خطے میں حکمران کے نمائندے اور ہلال احمر امارات کے چیئرمین شیخ حمدان بن زاید آل نھیان کی نگرانی میں بھیجی گئی ہے۔ ہلال احمر امارات نے متحدہ عرب امارات کی قیادت کی ہدایت پر عمل کرتے ہوئے فوری طور پر ملک کے اسٹریٹجک ایمرجنسی ریلیف ریزرو سے بیروت میں منگل کے زوردار دھماکے کے متاثرین کو امداد فراہم کی ہے۔ ہلال احمر امارات کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر محمد عتیق الفلاحی نے کہا کہ یہ امداد اماراتی قیادت کی ہدایت پر متحدہ عرب امارات کی جانب سے دنیا بھر میں ہونے والی آفات اور بحرانوں سے نمٹنے کے لئے کی جانے والی کوششوں کا تسلسل ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ امداد متحدہ عرب امارات کے رہنماؤں کی طرف سے دھماکے کے متاثرین کے ساتھ لامحدود یکجہتی کا اظہار ہے۔ انھوں نے کہاکہ اس بحران سے نمٹنے کیلئے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر ایک جامع اور مرحلہ وار امدادی منصوبہ تیار کیا گیا ہے۔ پہلے مرحلے میں موجودہ مشکل حالات کے دوران لبنانی صحت کی سہولیات کو بہتر بنانے کیلئے طبی سامان کی فراہمی پر توجہ دی جارہی ہے تاکہ دھماکے میں زخمی ہونے والوں کو فوری طبی امداد فراہم کی جاسکے۔ انھوں نے کہا کہ متاثرین کی ایک بڑی تعداد کے باعث لبنان کے طبی شعبے پر دباؤ ہے جسے کم کرنے کیلئے فوری طبی امداد کی فراہمی ضروری ہے۔ ڈاکٹر محمد عتیق الفلاحی نے کہا کہ اس منصوبے میں بچوں کو زیادہ سے زیادہ امداد اور نفسیاتی مدد دینا شامل ہے کیونکہ تمام دستیاب اطلاعات کے مطابق بچوں کی ایک بڑی تعداد اس دھماکے سے متاثر ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہلال احمر امارات متعلقہ لبنانی حکام کے ساتھ مل کر بیروت میں متحدہ عرب امارات کے سفارت خانے میں انسانی ہمدردی کی بنیاد پر امداد کی فراہمی کے بیورو کے تعاون سے امدادی پروگرام کو وسعت دے رہی ہے ۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://wam.ae/en/details/1395302861025

WAM/Urdu