اتوار 29 مئی 2022 - 12:11:40 شام

موسمیاتی تبدیلیوں  سے نبردآزما، البركة پلانٹ کاربن کے زیادہ اخراج کو روکے گا


ابوظہبی، 19 جنوری 2022 (وام) ۔۔ ابوظہبی کے الظفرہ ریجن میں واقع البركة نیوکلیئر انرجی پلانٹ اس سے قبل لگائے گئے اندازوں سے زیادہ کاربن کے اخراج کو روکے گا۔ اس بات کا اعلان ابوظہبی ہفتہ پائیداری کے دوران کیا گیا، جس میں اس اہم کردار کے حوالے سے بتایا گیا جو جوہری توانائی موسمیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے اور متحدہ عرب امارات اور دنیا بھر میں پائیدار ترقی کو فروغ دینے میں ادا کرتی ہے۔ اقوام متحدہ کے اقتصادی کمیشن برائے یورپ (یو این ای سی ای) کی طرف سے دستیاب تازہ ترین اعدادوشمار سے پتہ چلتا ہے کہ جوہری توانائی کم ترین لائف سائیکل کاربن اخراج کے ساتھ توانائی کا ایک ذریعہ ہے، جو ابت معلوم تمام ٹیکنالوجیز میں سے صاف ستھری ہے۔ تازہ ترین اعداد و شمار کی بنیاد پر، امارات جوہری توانائی کارپوریشن (ای این ای سی) نے اعلان کیا ہے کہ البركة پلانٹ کے چار یونٹ سالانہ2کروڑ24 لاکھ ٹن کارب کے اخراج کو روکیں گے جو پہلے کے تخمینہ سے 6فیصد زیادہ ہے۔ ای این ای سی کے منیجنگ ڈائریکٹر اور چیف ایگزیکٹو آفیسر محمد ابراہیم الحمادی کا کہنا ہے کہ البركةپلانٹ متحدہ عرب امارات کے لیے ایک پائیدار پاور ہاؤس ہے جو مقامی طور پر اور عرب دنیا میں کسی بھی صنعت کی سب سے بڑی ڈیکاربونائزیشن مہم میں صف اول میں ہے اور موسمیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے کے لیے ملک کی کوششوں کو فروغ دے رہا ہے ۔ 2021 میں تجارتی پیمانے پر آپریشن کے آغاز کے بعد سے، یونٹ 1۔ عرب دنیا کا سب سے بڑا واحد بجلی پیدا کرنے والا یونٹ ہے، جو مکمل طور پر کاربن کے اخراج سے پاک ہے۔ البركةپلانٹ کی وجہ سے خارج نہ ہونے والی 2کروڑ24لاکھ ٹن کاربن 48 لاکھ کاروں کی جانب سے چھوڑی جانے والی سالانہ کاربن کے برابر ہے۔ امارات واٹر اینڈ الیکٹرسٹی کمپنی (ای ڈبلیو ای سی) کے اعداد و شمار کے مطابق البركةپلانٹ کے مکمل طور پر فعال ہونے کے ساتھ ساتھ بڑے پیمانے پر اضافی شمسی توانائی سے بجلی کی پیداوار اور پانی کو قابل استعمال بنانےکے نتیجے میں 2025 میں کاربن کے اخراج میں 50 فیصد کمی متوقع ہے۔ ترجمہ۔تنویر ملک https://wam.ae/en/details/1395303012778

WAM/Urdu