منگل 20 اکتوبر 2020 - 7:28:29 صبح

ابوظبی میں دنیا کے نایاب ترین پرندےکی موجودگی کی تصدیق

  • steppe whimbrel sl003 (1)
  • steppe whimbrel sl002 (1)
  • steppe whimbrel sl001 (1)

ابوظبی، 19 ستمبر،2020 (وام) ۔۔ ایک ایسے وقت جب موسم خزاں کے پرندوں کی ہجرت جاری ہے دنیا کے نایاب ترین پرندوں میں سے ایک کو امارات برڈ ریکارڈ کمیٹی کے دو ارکان آسکر کیمبل اور سائمن لائیڈ نے ابوظبی کے سعادت بیچ گالف کورس پر دیکھا ہے۔ یہ اسٹپی ویمبرل پرندہ ویمبرل کی ایک انتہائی نایاب ذیلی قسم ہے جو بہار اور خزاں میں باقاعدگی سے امارات سے گزرتی ہے۔ ابوظبی میں دیکھا جانے والا پرندہ کمسن تھا اور اسی سال پیدا ہوا ہے۔ یہ پہلا موقع ہے جب دنیا میں کہیں بھی کسی نوعمر اسٹپی ویمبرل کو دیکھا گیا ہے۔ ویمبرل کی پانچ ذیلی اقسام میں سے سب سے زیادہ نایاب سٹیپے ویمبرلز ہیں جنکی ایک اندازے کے مطابق پوری دنیا میں تعداد صرف 100 پرندے ہے۔ اسٹیپے ویمبرلز کو پہلی بار 1901 میں موزمبیق میں جمع ہونے والے پرندوں میں میں دیکھا گیا تھا حالانکہ بعد میں ان اقسام میں سے ظاہر ہونے والے پرندوں کو 19 ویں صدی کے وسط تک روس میں جمع کیا گیا تھا۔ یہ کبھی بھی عام نہیں تھا اور اسے 1994 میں ناپید قرار دیا گیا تھا۔ 1997 میں جنوبی روس کی افزائش گاہوں میں اسکی ایک چھوٹی سی آبادی کو ایک بار پھر دریافت کیا گیا۔2009 تک اسکے بارے میں کچھ تصدیق شدہ ریکارڈ موجود تھا تاہم اس کے بعد سے اس کا کوئی ریکارڈ نہیں تھا۔ افزائش نسل کے تین مقامات پر 19 سے زیادہ جوڑے کبھی موجود نہیں پائے گئے ہیں اور بحیرہ کیسپین میں ہجرت کے وقت انکی زیادہ سے زیادہ تعداد 11 رہی ہے۔ کیمبل اور لائیڈ کا کہنا ہے کہ 29 اگست کو ہم سعادت بیچ گولف کورس پر تقریبا 20 ویمبرل پرندوں کا جائزہ لے رہے تھے کہ اس وقت ہماری حیرت کی انتہا نہ رہی جب ہم نے ان میں سے مختلف سفید پروں والا پرندہ دیکھا۔ انھوں نے کہا کہ انھیں فوراََ ہی اس کی امکانی اہمیت کا ادراک ہوگیا لہذا انھوں نے پرندوں کا مشاہدہ کرنے اور تصاویر کے حصول پر توجہ مرکوز کی تاکہ انھیں شناخت کی کلیدی خصوصیات کی جانچ ہوسکے۔ اس کے بعد انہوں نے برڈ لائف انٹرنیشنل کے گیری آل پورٹ کے ساتھ اپنی تصاویر شیئر کیں جنھیں موزمبیق کے پرندے ملے تھے اور وہ دنیا میں سٹیپ ویمبرز پرندوں کے ماہر مانے جاتے ہیں ۔ انھوں نے تصدیق کی کہ یہ ایک کمسن پرندہ ہے جو اس سال ذیلی اقسام کی کامیاب افزائش ثابت کررہا ہے۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://www.wam.ae/en/details/1395302870946

WAM/Urdu